logo

اسپیشل بیف نہاری ایڈیٹر کی جانب سے ہدایات

شروع کرنے سے پہلے

روایات کے مطابق نہاری کو اونٹ کے گوشت سے بنایا جاتا ہے تاہم اسے بڑے گوشت، بکری اور چکن سے بھی بنایا جاسکتا ہے، نہاری کی تیاری میں گوشت چاہے جیسا بھی استعمال ہو اس بات کا دھیان رکھنا ضروری ہے کہ گوشت کو اچھی طرح گلا کر نرم اور ذائقے دار بنالیا جائے۔

کھانا پکانے کا برتن اتنا گہرا ہونا چاہیے کہ اس میں گوشت اچھی طرح پک سکے اور اس کا بہترین ذائقے دار سالن بنے۔

 نہاری کا بھر پور مزہ لینے کے لیے ضروری ہے کہ اس کے ساتھ  مسالا اور دیگر لوازمات پیش کئے جائیں۔

خوش ذائقہ گاڑھا سالن محسور کن مہک کے ساتھ

بیف نہاری انتہائی خوش ذائقہ، مسحور کن اور مسالے دار ڈش ہے۔ جو آپ کی شاندار اور لذیذ کھانے کی تمنا کو پورا کرتی ہے۔ نہاری کو پاکستان کی قومی ڈش ہونے کا اعزاز بھی حاصل ہے۔ اسے گرم تندوری روٹی، ادرک، ہری مرچ، دھنیا اور لیموں کے ساتھ پیش کیا جاتا ہے۔ نہاری کی تیاری میں گوشت کے بہترین قتلے استعمال کئے جاتے ہیں تاکہ گاڑھا اور مزے دار سالن بن سکے۔ اس کے ساتھ گرم مسالے اور نباتات کا استعمال بھی کیا جاتا ہے۔ نہاری کا بہترین ذائقہ اور اشتہا انگیز مہک اس شاندار ڈش کی ثروت انگیزی اور لذت میں بے پناہ ا

 

نہاری مسالا بازار میں با آسانی دستیاب ہے، اگر آپ اسے گھر میں بنانا چاہیں تو یہ خاصا محنت طلب کام ہے تاہم اس کی اپنی ایک اہمیت ہے۔ نہاری مسالا مختلف مسالوں کا مجموعہ ہے جن میں شاہی زیرہ، پسی ہوئی ہلدی، ثابت کالی مرچ، سرخ مرچ، جائفل، جاوتری، لونگ، الائچی، تیز پان، کشمیری لال مرچ اور ثابت دھنیا شامل ہیں، پسے ہوئے مسالوں کو ایک منہ بند ڈبے یا جار میں بند کرکے رکھ لیں تاکہ یہ ہفتوں تک آپ کے کام آسکے۔

کسی بھی سالن کو شوربے دار اور گاڑھا بنانے کے لیے بھنی ہوئی پیاز ایک بہترین اور بنیادی چیز ہے۔ بھنی ہوئی پیاز بنانے کے لیے سفید کے مقابلے میں ہلکی لال رنگ کی پیاز زیادہ بہتر ہے۔ بھنی ہوئی پیاز بنانے سے قبل اسے دھونے کے بعد اچھی طرح خشک کرلیں کیونکہ پیاز جتنی خشک ہوگی بھننے کے بعد اتنی ہی اچھی بنے گی۔ یہ بھی دھیان میں رہے کہ آپ نے نہ تو پیاز کو بہت زیادہ پکانا ہے اور نا ہی جلانا ہے۔ ہلکا بھوننے کے بعد جب پیاز ہلکی زردی مائل ہوجائے تو اسے کڑاھی سے نکال کر پیپر ٹاول پر رکھیں اور اس کے اوپر ایک اور پیپر ٹاول ڈال کر اسے اچھی طرح ڈھانپ دیں۔

مکھن کو اچھی طرح پکانے کے نتیجے میں برآمد ہونے والے جوہر کو گھی کے عام فہم نام سے جانا جاتا ہے۔ جیسا کہ سب جانتے ہیں ناشتے کے لوازمات کی تیاری میں گھی کو سب سے زیادہ اہمیت حاصل ہے کیونکہ اس سے گرما گرم مزے دار پراٹھے بنتے ہیں، تازہ مکھن کو کسی برتن میں ڈال کر ہلکی آنچ پر پکایا جائے تو اس میں قدرتی طور پر موجود پانی بھاپ بن کر ہوا میں تحلیل ہوجاتا ہے اور تازہ گھی حاصل ہوتا ہے، اسے کسی برتن میں ڈال کر ٹھنڈی جگہ پر سنبھال کر رکھ دیا جائے تو تھوڑے ہی عرصے میں ٹھوس شکل اختیار کرلیتا ہے، باربی کیو کے ساتھ ساتھ مختلف کھانوں میں لذت، خوشبو اور ذائقہ پیدا کرنے کے لیے بھی گھی کا استعمال کیا جاتا ہے۔

گوشت کی تیاری

نہاری میں استعمال ہونے والے گوشت کی تیاری بھی ایک اہم مرحلہ ہے۔ نہاری میں پنڈلی اور بونگ کی بوٹیوں کو بہت پسند کیا جاتا ہے ان بوٹیوں کو بنانے کے لیے بڑی توجہ اور مہارت کی ضرورت ہوتی ہے، پکانے سے قبل گوشت کو اچھی طرح دھوکر اس کی مناسب بوٹیاں بنالیں تاکہ پکنے کے بعد آپ اس کے بہترین ذائقے سے لطف اندوز ہوسکیں۔ نہاری میں استعمال ہونے والا گوشت اگر پنڈلی یا ران کا ہو تو کھانے کا لطف دوبالا ہوجاتا ہے۔ یہ گوشت اونٹ، گائے یا بکری کا ہو تو زیادہ اچھا ہے۔ نہاری کے علاوہ اس خاص حصے کے گوشت کو باربی کیو اور اسٹیکس میں بھی استعمال کیا جاتاہے۔

 
گوشت کی تیاری

سالن کا گاڑھا پن

سالن میں گاڑھا پن پیدا کرنے کے لیے کئی طرح کے اجزا استعمال کئے جاتے ہیں، سالن جتنا گاڑھا اور خوش رنگ ہوگا کھانے میں اتنا ہی ذائقہ دار اور لذیذ ہوگا۔ سالن کو گاڑھا کرنے کے لیے دیگر چیزوں کے ساتھ آٹے کا استعمال بھی کیا جاتا ہے خاص طور پر نہاری میں آٹے کا استعمال بہت عام ہے۔ اس کے علاوہ قورمے یا اسی قسم کے دیگر شوربے دار کھانوں میں یک رنگی، مہک اور لذت پیدا کرنے کے لیے بھی اس کا استعمال کیا جاتا ہے۔

 
سالن کا گاڑھا پن

بیف نہاری

(4318 وِیوز )

بیف نہاری کا شمار پاکستان کے مقبول ترین کھانوں میں کیا جاتا ہے.جسے سبھی شوق سے کھاتے ہیں۔ اسے ناشتے ، کھانے یا خصوصی مواقع پر بھی پیش کیا جاتا ہے. اسے مسالا جات اور دیگر لوازمات کے ساتھ پیش کیا جاتا ہے اور نان یا روٹی کے ساتھ کھایا جاتا ہے.

  • درمیانی
  • 6 افراد
  • 45 Min
  • 1 Likes
 

اجزاء

    • شاہی زیرہ1 چائے کا چمچ
    • لال مرچ پاؤڈر1 چائے کا چمچ
    • ہلدی پسی ہوئی½ چائے کا چمچ
    • ثابت کالی مرچ1/2 چائے کا چمچ
    • لونگ1/2 چائے کا چمچ
    • نمکحسبِ ذائقہ
    • بادیان کا پھول1-2 عدد
    • جائفل1-2 چائے کا چمچ
    • جائفل½ چائے کا چمچ
    • چھوٹی الائچی2 عدد
    • تیز پات1-2 عدد
    • دیگی لال مرچ1 چائے کا چمچ
    • الائچی4-5 عدد
    • دھنیا پاؤڈر1 چائے کا چمچ
    • گھی1/2 کپ
    • گائے کا گوشت بغیر ہڈی کا1 کلو
    • نہاری مسالہ5 کھانے کا چمّچ
    • ادرک لہسن کا پیسٹ1 کھانے کا چمّچ
    • پانی1 لیٹر
    • آٹا پانی ملا5 حصے پانی اور 1 حصہ آٹا
    • ادرک لمبائی میں کٹی ہوئیگارنش کے لیے
    • تازہ دھنیا کٹا ہواگارنش کے لیے
    • ہری مرچیں کٹی ہوئیگارنش کے لیے
    • لیمو کٹا ہواگارنش کے لیے

ترکیب

  • ایک گرائنڈر میں شاہی زیرہ، لال مرچ، ہلدی، ثابت کالی مرچ، لونگ، نمک، بادیان کے پھول، جائفل جویتری، بڑی الائچی، چھوٹی الائچی، تیز پات، کشمیری مرچیں، دھنیا پاؤڈر ڈال کر پیس لیں۔ نہاری مسالہ تیار ہے۔
  • اب ایک پتیلے میں گھی گرم کرلیں۔ اس میں بوٹیاں ڈال کر پکائیں، اس کے بعد اس میں نہاری مسالہ ڈالیں اور اچھے سے بھون لیں۔
  • پھراس میں ادرک لہسن کا پیسٹ ڈال کر اچھے سے مکس کرلیں۔
  • اب پانی شامل کر کے مکس کریں اور پتیلی کو ڈھانک کر 25-15 منٹ تک ہلکی آنچ پر پکائیں جب تک گوشت گل نہ جائے۔
  • اب میدہ اور پانی کے مکسچر کو ڈال کر ہلائیں۔ درمیانی آنچ پر ڈھکن ڈھانک کر 10 سے 15 منٹ تک پکائیں تاکہ سالن گاڑھا ہوجائے اور تیل اوپر آجائے۔
  • ادرک، مرچیں اور دھنیا کے ساتھ گارنش کر لیں اور نان کے ساتھ پیش کریں۔
  • مزے دار نہاری تیار ہے۔
 

آپکو کیسا لگا؟

 

رائے (4)